ناٹنگھم: تیسرے ایک روزہ میچ میں انگلینڈ نے پاکستان کو 445 رنز کا کرکٹ کی تاریخ کا سب سے بڑا ہدف دیا جس کے جواب میں پاکستان کی بیٹنگ جاری ہے۔

انگلینڈ کے شہر ناٹنگھم میں انگلینڈ نے پاکستان کے خلاف پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ 50 اوورز میں 3 وکٹوں کے نقصان پر کرکٹ کی تاریخ میں سب سے بڑا ٹوٹل 444 رنز بنائے جس کے جواب میں سمیع اسلم اور شرجیل خان نے اننکز کا آغاز کیا لیکن سمیع اسلم چوتھے ہی اوور میں 8 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے جس کے بعد کپتان اظہر علی خود بیٹنگ کے لیے آئے لیکن وہ بھی صرف 13 رنز ہی بناسکے۔ شرجیل خان نے 29 گیندوں پر 1 چھکے اور 12 چوکوں کی مدد سے 58 رنز کی جارحانہ اننگز کھیلے لیکن وہ اپنی اننگز کو مزید آگے نہ بڑھاسکے اور باؤنڈری پر کیچ دے بیٹھے۔ بڑا ہدف دیکھ کر مڈل آرڈر کے پیر بھی لڑکھڑاگئے بابر اعظم 9 اور شعیب ملک صرف ایک رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔

اس سے قبل انگلش کپتان اون مورگن نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تو الیکس ہیلز اور جیسن روئے نے اننگز کا آغاز کیا، جیس روئے 15 رنز پر حسن علی کا نشانہ بنے جس کے بعد جوئے روٹ نے الیکس ہیلز کے ہمراہ ملکر 248 رنز کی شاندار شراکت داری قائم کی اس دوران الیکس نے 22 چوکوں اور 4 چھکوں کی مدد سے 171 رنز کی جارحانہ اننگز کھیلی جب کہ جوئے روٹ  85 رنز بنانے میں کامیاب رہے۔ جوز بٹلر اور کپتان مورگن نے چوتھی وکٹ کے لیے 161 رنز کی جارحانہ شراکت داری قائم کی جس میں بٹلر 51 گیندوں پر 90 اور مورگن 27 گیندوں پر 57 رنز بنا کر ناقابل شکست رہے۔

پاکستان کی جانب سے وہاب ریاض سب سے مہنگے بولر ثابت ہوئے اور انہوں نے 10 اوورز میں بغیر کسی وکٹ کے 110 رنز دیے، عامر نے بغیر کسی وکٹ کے 72، حسن علی نے 74 رنز دے کر 2 اور محمد نواز نے ایک وکٹ حاصل کی۔

واضح رہے انگلینڈ نے ابتدائی دونوں میچز میں پاکستان کو شکست سے دوچار کیا تھا جب کہ قومی ٹیم کو سیریز بچانے کے لیے آج کا میچ جیتا ضروری ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں